امام احمد رضا اور مرشدانِ مارہرہ --پہلی قسط

Abstract خلاصہ

مولانا کی تعریف واصول اور یہ اصول دولت کی شکل میں مارھرہ کی مقدس سرزمین سے حاصل ہونے ،عشق رسول میں فنا ہونے ،مرشد برحق کی چند ساعتوں کی صحبت میں مولانا مرشد کی شبیہ بن جانے اور مولانا کی ذات سے علم کے ایسے چشمے بہنے لگے سب در رضا پر آنے لگے ان سب کا ذکر مقالے میں کیا گیا ہے۔مولانا کے مرشد احمد نوری جن سے مولانا کو شرف خلافت واجازت حاصل تھا۔ان کی تعریف و مدح میں مولانا نے جو فرمایا اسکا مفہوم اور مرشد نے جو کتاب (سراج العوارف) تصنیف فرمائی جو فقہیہ ہے۔ مولانا نے گیارہ عربی اشعار میں تا ریخ لکھی اور مولانا نے جو کہا، مرشد کے شہزادے کے دو مناقب رقم کرنے، ابوالحسین کی ولادت ووصال اورانکے آباؤاجداد کا ذکر مقالے میں موجود ہے ۔ مولانا نے نوری میاں کی پہلی و دوسری منقب جو ۲۳اشعارپر لکھی، جوقصیدہ مبارکہ سن کرنوری میاں نے مولانا کو ایک نفیس عمامہ معطرومعنبر عطافرمایا اور اپنے دست مبارکہ سے آپکے سر پر باندھنےکا ذکر مقالے میں موجود ہے۔

Author/Editor مصنف ؍ مرتب

Publication Date تاریخ اشاعت

Format

Language

Identifier

49

Journal Name

Volume

Issue

Page Range

26-28

Files

26-28.pdf

Citation

احمد میاں برکاتی، علامہ مفتی, “امام احمد رضا اور مرشدانِ مارہرہ --پہلی قسط,” Research Network رابطہ تحقیق, accessed December 14, 2017, http://research.net.pk/items/show/49.

Social Bookmarking

Position: 110 (26 views)