سا ئنس، ایمانیات اور امام احمد رضا

Abstract خلاصہ

مولانا نے ساری زندگی اللہ تعالیٰ کی یاد و عبادت کے ساتھ اسکا ذکروفکر ان چاروں طریقوں سے کیا جنکو اللہ تعالیٰ نے سورہ اٰل عمران کی ۱۹۱ویں آیت میں بیان کیا وہ چار طریقے، اہل الذکرکی تعریف ، انکی اقسام اس مقالے میں شامل ہے۔ مولانا عبقری شخصیت ، نائب رسول اور فسٔلواھل الذکر کی جامع تفسیرہیں۔ جنہوں نے مسلسل ۵۵ سال اس زمانے کےتمام علوم وفنون کے سوالات کے جوابات اس علم کی اصطلاحات و بھرپور دالائل کے ساتھ دیئے ۔ برصغیرمیں علوم دینیہ کے بےشمار علماء ہر زمانے میں موجود رہے ،اکثریت علوم دنیاوی میں دسترس نہ رکھتی تھی ۔ اللہ تعالیٰ نے مولانا کو دونوں علوم پرکامل دسترس دی تھی ،مسلمان سائنسدانوں کی لمبی فہرست ہے لیکن مولانا ایک منفرد سائنسدان ہیں۔ مولانا کی دنیاوی علم پر ایک بحث کا حصہ اس مقالے میں شامل ہے۔ جس سے پتہ چلتا ہے مولانا ایک طرف قانون فطرت اور دوسری طرف اللہ تعالیٰ کی قدرت کی فوقیت کو ظاہر کر رہے ہیں اور یقیناً ایک مسلمان کے ایمان کا تقاضہ بھی یہی ہے۔

Publication Date تاریخ اشاعت

Format

Language

Identifier

240

Journal Name

Volume

Issue

Page Range

206-212

Files

206-212.pdf

Citation

مجید اللہ قادری، پروفیسر ڈاکٹر, “سا ئنس، ایمانیات اور امام احمد رضا,” Research Network رابطہ تحقیق, accessed January 23, 2018, http://research.net.pk/items/show/240.

Item Relations

This item has no relations.

Social Bookmarking

Position: 184 (22 views)