امام احمد رضا خاں اور علوم حدیث

Abstract خلاصہ

آیت کریمہ مع ترجمہ ، علم وعمل کی تعریف ،مولاناکے آباؤاجداد خاندان علمی وعملی ہونے ،والد نقی علی بلند پایہ فقیہ ہونے،مولانا کے ولادت ،تعلیم کا آغاز ،چار سال میں قرآن پڑھنے ، علوم درسیہ سے فراغت حاصل کرنے اور سند حدیث اپنے والد ومرشد ومرشد کے پوتے ابو الحسن نوری سے حاصل کرنے کا تذکرہ مقالے میں موجود ہے۔ سند حدیث کے سلسلہ میں جو محدثین ہیں انکے نام ،علوم قرآن وعلوم حدیث جن میں مولانا کو مہارت حاصل تھی ان علوم کے نام ، مولانا علوم حدیث میں دوسرےعلوم سے زیادہ مہارت رکھتے تھے۔ شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کے بعد علوم حدیث میں آپ جیسا کوئی ماہر نہیں ۔ فتاویٰ رضویہ جو علوم حدیث کا سمندر ہے۔ایک رسالہ جوایک سوال کے جواب میں لکھا گیا ہے اس کا نام ،رسالہ میں موجود کئ حدیثی مباحث ہیں جو مقالے میں شامل کئے گئے ہیں ،جس سے پتہ چلا صرف اس ہی کتاب سے مولانا کے علوم حدیث تجرثابت ہوتا ہے۔

Author/Editor مصنف ؍ مرتب

Publication Date تاریخ اشاعت

Format

Language

Identifier

195

Journal Name

Volume

Issue

Page Range

30-45

Files

030-045.pdf

Citation

منظور احمد سعیدی، ڈاکٹر مفتی, “امام احمد رضا خاں اور علوم حدیث,” Research Network رابطہ تحقیق, accessed December 14, 2017, http://research.net.pk/items/show/195.

Item Relations

This item has no relations.

Social Bookmarking

Position: 366 (13 views)