علامہ اختر شاہ جہانپوری اور رضویات

Abstract خلاصہ

علامہ اخترکی تاریخ وپیدائش ووفات ، عمر بھرمختلف جسمانی بیماریوں سے نبردارآزمارہے۔ وہ انسان رسالت و شان صحابہ و شان ولایت یعنی اللہ تمام محبوبوں کے گستاخوں کیلے درہ فاروقی وشمشیر حیدر تھے ۔ انکے قلم کی کاٹ کے حوالے سے لوگ انہیں خدائی فوج کا ابابیل قرار دیتے ہیں ۔ علامہ صاحب کا سلسلہ قادری رضویہ کی ترویج میں نقشبندی کردار، خاندان رضویہ سے روابط ومراسم ، سلسلہ عالیہ قادریہ رضویہ میں اجازت وخلافت ،سلسلہ عالیہ قادریہ نقشبندیہ مجدد یہ ان مایہ ناز شخصیات سے اجازت و خلافت حاصل ہونے، سلسلہ عالیہ قادریہ رضویہ میں جن حضرات سے اجازت وخلافت حاصل تھی انکے نام مقالے میں درج ہیں۔ علامہ صاحب کا علمی میدان میں اترنے ،وصال تک حق وصداقت کی حمایت میں مسلسل لکھنے،گستاخان رسول و بد مذہبوں کا تعاقب کرنے ،مولانا سے عقیدت ومحبت کرنے کا تذکرہ مقالے میں شامل ہے۔ مولانا کے دفاع میں علامہ صاحب نے جتنا لکھا وہ آپکا عاشق مولانا ورضوی ہونے کا جیتا جاگتا ثبوت ہے۔ شدت وجلالت جوعشق رسول کی وجہ سے تھی۔ کنزالایمان شریف کیلے خدمات ، رضویات ، پر نگارشات مطبوعہ تصانیف کے نام اور غیر مطبوعہ تصانیف کے عنوان کے نام ، زینت ترتیب کتب کے نام ، مقدمات وپیش لفظ کے نام مقالے میں شامل ہیں ۔ جس سے پتہ چلتا ہے ، علامہ صاحب سے قدرت نے جو کام لینا تھا لے لیا وہ اپنے حصے کا کام کرگئے اور آج انکے انداز میں لکھنے والا کوئی نہیں ہے۔ دنیا سے جانے کے بعد ان کی غیر مطبوعہ نگارشات کو اشاعت کیا جائے،انکے بکھرے ہوئے پھول چن کر انہیں گلدستے کی صورت میں پیش کیا جائے اور انکو خراج تحسین پیش کرنے کیلے خصوصی شائع کیے جا نے چائیں۔

Author/Editor مصنف ؍ مرتب

Publication Date تاریخ اشاعت

Format

Language

Identifier

184

Journal Name

Volume

Issue

Page Range

133-139

Files

133-139.pdf

Citation

عبدا لستار طاہر مسعودی ، محمد, “علامہ اختر شاہ جہانپوری اور رضویات,” Research Network رابطہ تحقیق, accessed April 24, 2018, http://research.net.pk/items/show/184.

Item Relations

This item has no relations.

Social Bookmarking

Position: 119 (31 views)