امام احمد رضا خان ایک موسوعاتی سائنسدان

Abstract خلاصہ

قرآن حکیم نے انسانی ،خارجی کائنات وخالق کائنات سے متعلق ایک نئے اسلوب بیان وانداز فکر کی غوروفکرڈالی ،جسےآج کل اصلاح میں انٹرڈسپلینری وھولسٹک کہتے ہیں۔ قرآن حکیم کے بعد دوشخصیتیں کو قابل ذکرولائق توجہ قراردیا۔ جنہوں نے خالص دینی پلیٹ فارم سے اس قسم کی بین الموضوعا تی وکلیاتی موقف اپنا کراسکی تعلیم دی ۔ ان دونوں شخصیتوں کا تعارف مقالے میں کیا گیا ہے۔ مولانا تقسیم پاک وہند سے پہلے ہندوستان میں دینی پلیٹ فارم پر واحد شخصیت نمودار ہوئے جنہوں نے نرے سپیشلائزین کی روش سے ہٹکر علوم وفنون کے بارے میں وہی انسائیکلوپیڈیائی ،موسوعاتی ، انٹرڈسپلینری وھولسٹک رویہ اپنایا جومشرق کے قدیم سائنسدانوں،فلسفیوں،علماء،فقہاءومورخین کا معمول رہا۔ جن میں سےہرایک فرد نے ایک حیرت انگیزانسائیکلوپیڈیائی نوع انسانی کیلئے چھوڑا۔ مولانا کے ایک ہزار تصانیف ،حاشیوں وشرحوں کا ذخیرہ چھوڑنے،مولاناکے تحقیقات ومباحث ہیڈئینگ کے ذریعے،مولانا وہ نابغہ روزگارذہن ہے جس نے اس قسم کی ظواہریت،مادیت اور حسیت پر مشتمل لاادریت کے مضمرات کو بھانپ لینے اوراسکے منطقی وعلمی مغالطوں کی نشاندہی کرنے کو میشن بنانے کا تذکرہ مقالے میں موجود ہے۔اس گفتگو کیلے ایک ضروری مختصر سا تمہیدی پس منظرمہیا کیاگیا ہے۔ انسانی دماغ اس کرہ زمین پر سب سے ذیادہ پچیدہ مشینری ہے اس پر مقالے میں مختصر بحث کی گئ ہے۔ جس سے پتہ چلا انسانی دماغ کی استعدادوصلاحیت کمپیوٹر کی قوت سے ناقبل بیان،لامتناہی طور پرزیادہ ہے ۔ یہی وہ نکتہ ہے جسے مولانا نے اپنی مشہور تصنیف میں اس حسن وخوبی کے ساتھ سمجھایا ،جس کوپڑھکر عرب وعجم کے مشاہیر علماءوفضلاء نے اس پر تقاریط لکھ کر اسکے مصنف کو خراج تحسین پیش کیا۔

Author/Editor مصنف ؍ مرتب

Publication Date تاریخ اشاعت

Format

Language

Identifier

178

Journal Name

Volume

Issue

Page Range

84-90

Files

084-090.pdf

Citation

جمیل قلندر ، پر و فیسر, “امام احمد رضا خان ایک موسوعاتی سائنسدان,” Research Network رابطہ تحقیق, accessed January 23, 2018, http://research.net.pk/items/show/178.

Item Relations

This item has no relations.

Social Bookmarking

Position: 18 (81 views)